Breaking News

مولانا سمیع الحق کو راولپنڈی میں نا معلوم افراد قاتلانہ حملہ میں شہید کردیا گیا۔ Maulana Sami ul Haq shot dead in Rawalpindi

مولانا سمیع الحق کو راولپنڈی میں نا معلوم افراد قاتلانہ حملہ میں شہید کردیا گیا۔

Maulana Sami ul Haq shot dead in Rawalpindi

راولپنڈی میں مولانا سمیع الحق قاتلانہ حملے میں شدید زخمی ہونے کے بعد شہید ہوگئے۔
مولانا حسیم نے مولانا سمیع الحق پر قاتلانہ حملے اور ان کی شہادت کی تصدیق کی ہے
 Jamiat Ulema-e-Islam (JUI-S) Maulana Sami ul Haq has been killed in a gun attack in Rawalpindi,
The terrorist attack took place in the jurisdiction of Lohi Bhir police station near  Rawalpindi on Friday evening.
According to sources, gunmen on motorbikes opened fire on Sami ul Haq's vehicle and sped away. 
 The JUI-S chief was being shifted to DHQ Hospital before he succumbed to his wounds.
مولانا سمیع الحق 18 دسمبر 1937ء کو اکوڑہ خٹک میں پیدا ہوئے، ان کے والد کا نام مولانا عبدالحق تھا جو بڑے مذہبی شخصیت تھے۔
مولانا سمیع الحق صاحب اس وقت دار العلوم حقانیہ کے مہتمم اور سربراہ تھے، جمعیت علمائے اسلام (س) کے سربراہ اوردار العلوم حقانیہ جوایک دینی درس گاہ ہے اور دیوبند مکتبہ فکر سے تعلق رکھتی ہے۔اس کے بانی تھے جس میں ان۔کے بھائی،بیٹے اور بتیجھے بھی خدمات انجام دے رہے ہیں۔۔۔
حضرت شیخ صاحب کے ساتھ جو بھی وقت گزرا یا کبھی ملاقات ہوئی ہے وہ نہ بھولنے والے لمحات ہیں۔ آج مغرب کی نماز کے بعد مسجد میں امام۔مسجد کے ساتھ اس کے کمرے حضرت شیخ صاحب کے بارے میں گفتگو کر رہے تھے اور تقریباٙٙ آدھا گھنٹہ بعد سلمان الحق حقانی جوکہ شہید رحمتہ اللہ علیہ کے بتیجھے ہیں، سے حضرت صاحب کی شہادت کی خبر موصول۔ہوئی انتہائی افسردہ کر دیا۔۔۔
مولانا سمیع الحق دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین، متحدہ مجلس عمل کے بانی رکن اور حرکت المجاہدین کے بانی بھی تھے۔ وہ پاکستان کے ایوان بالا (سینیٹ) کے رکن بھی رہے اور متحدہ دینی محاذ کے بھی بانی ہیں جو پاکستان کی چھوٹی مذہبی جماعتوں کا اتحاد ہے یہ اتحاد انہوں نے سال 2013ء کے انتخابات میں شرکت کرنے کے لیے بنایا تھا۔..
اللہ شیخ صاحب کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام۔نصیب فرمائے۔۔ 

No comments:

Post a Comment