Breaking News

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی100 روزہ کارکردگی کے حوالے سے جنا ح کنونشن سینٹرمیں تقریب سےخطاب

حکومت کے 100 دن کے تمام منصوبے غریبوں کو اوپر لانے کیلئے ہیں، وزیراعظم عمران خان۔۔

پاکستان تحریک انصاف نے حکومت کی سو روزہ کارکردگی پیش کردی وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہم نے100دن میں عام آدمی کیلئے پالیسیاں مرتب کیں، میرے پاس سارے وہ پلان ہیں جو غریبوں کو اوپر لاسکتے ہیں ،میں نے وعدہ کیا تھا کرپشن پرہاتھ ڈالوں گا 375 ارب روپے کے جعلی اکاؤنٹس پکڑے گئے ہیں ۔

حکومت کی جانب سے سو روزہ کارکردگی سے متعلق منعقد کی گئی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سو روز کے دوران صرف ایک چھٹی کی، میری اہلیہ نے مشکل وقت میں بڑا ساتھ دیا،انسان کے ہاتھ میں کوشش ہوتی ہے،کامیابی اللہ دیتا ہے ریاست مدینہ کی تمام پالیسیوں کا مرکز رحم تھا، کمزوروں کی دیکھ بھال ریاست کی اولین ذمہ داری ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے100دن میں عام آدمی کیلئے پالیسیاں مرتب کیں، 22 سال سے لوگوں سے وعدہ کررہا تھا کرپشن پر قابوپائیں گے کیونکہ کرپشن غربت پیداکرتی ہے، امیر اور غریب میں فرق ہی کرپشن ہے، ادارے صرف کرپشن کی وجہ سے تباہ ہوئے۔
انہوں نے کہا کہ جب تک میں اداروں کو تباہ نہ کروں پیسہ نہیں بناسکتا، اپنی چوری بچانے کے لئے ایف بی آر کو تباہ کیا گیا، نیب آزاد ادارہ ہے، چپڑاسی بھی حکومت بھرتی نہیں کرتی، نیب جو کچھ کررہااس کے ذمہ دارنہیں، کرپشن سے متعلق ہر روز نیا انکشاف ہوتا ہے، میرے خیال میں نیب اس سے بہتر پر فارم کرسکتاہے، نیب زیادہ ترپلی بارگین پراتفاق کرتی ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ چوروں کے خلاف کارروائی پر جمہوریت خطرے میں پڑجاتی ہے، میں نے وعدہ کیا تھا کرپشن پرہاتھ ڈالوں گا 375 ارب روپے کے جعلی اکاؤنٹس پکڑے گئے ہیں جبکہ 88 ہزارایکڑکی زمین قبضہ مافیاسے خالی کرائی، ہم نے ایف آئی اے کو مضبوط کیا، وزیراعظم ہاؤس میں ایسٹس ریکوری یونٹ بنایا۔
چوری کاپیسہ لانے کیلئے26ممالک سےمعاہدےکئے، چھبیس ممالک کے ساتھ معاہدے کئے، 26 ممالک میں پاکستانیوں کاغیرقانونی11ارب ڈالرموجود ہے جبکہ بیرون ملک پاکستانیوں نےباہر9ارب ڈالرکی جائیداد خریدی۔
انہوں نے کہا کہ میرے پاس سارے وہ پلان ہیں جو غریبوں کو اوپر لاسکتے ہیں، مجھے مہنگائی کااحساس ہے، جانتاہوں نچلاطبقہ تکلیف میں ہے،قیمتیں بڑھی ہوئی ہیں، مہنگائی کم کرنےکیلئےجتنی کوشش کرسکتاہوں کررہاہوں، بجلی مہنگی ہونے کی وجہ بجلی چوری ہونا ہے، ہرسال 50ارب روپےکی بجلی چوری ہوتی ہے، بجلی چوروں کیخلاف ابتک6ہزار مقدمات درج کیے گئے ہیں۔
عمران خان نے کہا کہ قرضےکی واپسی کی وجہ سےقیمتیں بڑھتی ہیں، بھینسیں کسی کودکھانےکےلئےفروخت نہیں کیں، وزیراعظم ہاؤس نے15کروڑروپےکی بچت کی ہے، مہنگائی کم کرنےکیلئےجتنی کوشش کرسکتاہوں کررہاہوں، ہمیں لوگوں کوٹیکس نیٹ میں لےکرآناہے۔
سرمایہ کاری کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ہربارڈالر کم ہونےکی وجہ سے آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑتا ہے، سرمایہ کارجانتے ہیں یہ حکومت کرپٹ نہیں، بہت سےلوگ پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں، پاکستان کے پاس نوجوانوں کی بڑی تعداد ہے، پاکستان سرمایہ کاری کے لئے بہترین جگہ ہے، معیشت کی بہتری کے لئے ٹیکس ریفارمزکرنی ہوں گے، سرمایہ کار ہمارے پاس آنا چاہتے ہیں،انہیں سہولیات دینی ہوں گے، سرمایہ کاری کے لئے رکاوٹیں ختم کرنی ہوں گے، آئی ایم ایف سے بچنے کیلئے سرمایہ کاری، ایکسپورٹس بڑھانی ہوں گی ۔
تعلیی نظام کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ تعلیم کا نظام ٹھیک کرنے کے لئے ہم نے کمیٹی بنائی، ہم نے اپنے ملک میں تعلیم کے تین نظام بنائے ہوئے ہیں، پوری کوشش ہے ایک تعلیمی نظام لے کرآئیں، کوشش ہے جو بچے اسکولوں سے باہرہیں انہیں اسکول بھیجیں۔
صحت کے مسائل پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سرکاری اسپتالوں کی حالت بہترکرنے کے لئے ٹاسک فورس بنائی، تعلیم کے ساتھ ساتھ صحت پربھی توجہ دے رہےہیں،صحت کارڈ خیبرپختونخوا میں کامیاب رہا۔
شروع میں کہا گیا وزیراعلیٰ پنجاب کس شخص کو بنادیا گیا ہے عثمان بزدارسے متعلق عجیب عجیب باتیں کی گئیں عثمان بزدار انتہائی سادہ آدمی ہے
ان کا مزید کہنا تھا کہ غربت کے خاتمے کیلئے جلد ملک گیر پروگرام شروع کریں گے، پنجاب میں 3مختلف مقامات پر بے گھروں کیلئے ٹینٹ لگوائے، غریبوں کے لئے اسپیشل پروگرام تیار کررہے ہیں، بلاسود قرضے کی فراہمی پر بھی غور کررہے ہیں۔

No comments:

Post a Comment